28

گلگت میں سکائی ویز کو 10 مرلہ اور فیصل مور کو 8 مرلہ زمین الاٹ کردی گئی

گلگت(نمائندہ خصوصی)نیٹکو ورکرز یونین کا ایک ہنگامی اجلاس بس اڈہ گلگت میں منعقد ہوا جس میں کثیر تعداد میں ورکروں نے شرکت کیا اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے یونین کے صدر فضل الہی نے کہاکہ نان لوکل ٹرانسپورٹر سکائی ویز اور فیصل مورز کو بس اسٹینڈ گلگت میں جو زمین دی گئی ہے اس پر سخت اعتراض اٹھایا جس میں سکائی ویز کو 10 مرلہ اور فیصل مور کو 8 مرلہ زمین الاٹ کردی گئی ہے اس میں ٹرمینل کی تعمیرات شروع کر دی گئی ہے جب کہ گلگت بلتستان کے تمام اضلاع کو بلدیہ کی طرف سے جو اسٹینڈ دیا گیا ہے اس میں مشکل سے ایک ویگن کھڑا ہو سکتی اور ان اسٹینڈ پر گلگت بلتستان کے مختلف ڈسٹرکٹ کو پسنجر سروس جاتی ہے ان کے پاس نہ ویٹنگ روم ہیں نہ باتھ روم ہیں اور ان بڑے نان لوکل سرمایہ داروں کو نواز نے کے لیے روڑ پرمٹ بھی دی گئی اور قیمتی زمین بھی یہ سراسر اس قوم کے ساتھ ظلم بھی ہے اور قوم حقوق پر ڈاکہ بھی ہے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے فضل الہی نے مزید کہا اس وقت گلگت بلتستان کے مختلف شعبوں اور کاروبار میں غیر مقامی سرمایہ داروں نے مکمل طور پر قبضہ کر لیا ہے اور ہماری قوم کو اس وقت مذہب اور قومیت کی ٹرک کی بتی کے پیچھے لگا دیا گیا ہے اور موجودہ صورتحال میں ہمارے مذہبی سیاسی اور علاقے نمبرداران صاحبان اپنی قومی ذمہ داری کو پورا نہیں کر رہے ہیں جس کی وجہ سے دن بدن ہمارے اثاثے۔شعبے اور کاروبار پر غیر مقامی لوگوں نے مکمل طور پر قبضہ کر لیا ہے جو انتہائی ہی تشویش کی بات ہے اجلاس کے آخر میں فضل الہی نے کہا کوہستان کے مقامی لوگوں کے علاوہ کسی بھی غیر مقامی ٹرانسپورٹر کو ہم قبول نہیں کرتے ہیں اور میری گلگت بلتستان کے تمام سیاسی مذہبی سماجی وکلائ برادری سے اپیل ہے ان غیر مقامی سرمایہ داروں کا راستہ روکنے کے لئے ہمارے ساتھ دے اور اپنی اور آنے والی نسل کا مستقبل کا سوچیں اور بہت ہی جلد ہم گلگت بلتستان کے تمام ٹرانسپورٹروں سے مل کر سخت احتجاج کریں گے اور ان کو قبضہ کرنا نہیں دیں گے اور قوم سے بھی اپیل ہے منظم انداز میں آواز بلند کرے اور ایک زندہ قوم ہونے کا ثبوت دیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں