21

زراعت کے شعبہ میں برآمدات کی وسیع ترگنجائش ہے، وفاقی وزیرقومی غذائی تحفظ وتحقیق سید فخرامام کی پاکستان میں ہنگری کے ناظم الامورسے ملاقات میں گفتگو

اسلام آباد:وفاقی وزیرقومی غذائی تحفظ وتحقیق سید فخرامام نے کہاہے کہ پاکستان بھرپور زرعی استعداد کاحامل ملک ہے اورزراعت کے شعبہ میں برآمدات کی وسیع ترگنجائش ہے، وفاقی وزیر نے فوڈ پراسیسنگ اورپانی کے تحفظ کیلئے 50 ملین ڈالرکے قرضہ سہولت اورپاکستانی طلبا کیلئے 200 وظائف کی پیشکش پر ہنگری کی حکومت کاشکریہ بھی اداکیاہے۔ انہوں نے یہ بات پاکستان میں ہنگری کے ناظم الامور تیودرتکاکس سے ملاقات میں گفتگو کے دوران کہی۔وفاقی وزیرنے کہاکہ ملک میں زراعت کو جدید خطوط پراستوارکرنے کیلئے ہنگری کے تعاون سے خوراک کی پیداوارمیں اضافہ اورفوڈ پراسیسنگ کے شعبہ میں جدید ٹیکنالوجی کو متعارف کرانے کاعمل تیزکیاجائیگا۔وفاقی وزیرنے کہاکہ ہنگری کی حکومت کی جانب سے فوڈپراسیسنگ اورپانی کی بچت کے منصوبوں کیلئے 50 ملین ڈالرکے قرضہ سے نہ صرف مقامی زرعی شعبہ کو فروغ ملے گا بلکہ زیادہ رقبہ پرفصلوں کی کاشت بڑھانے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے پاکستان اورہنگری کے درمیان زرعی تجارت سے متعلق امورکابھی جائزہ لیا اورکہاکہ پاکستان بھرپور زرعی استعداد کاحامل ملک ہے اورزراعت کے شعبہ میں برآمدات کی وسیع ترگنجائش ہے۔وفاقی وزیر نے امید ظاہرکی کہ ہنگری پاکستان سے زرعی مصنوعات کی درآمدات میں اضافہ کرے گا جس سے دونوں ممالک کے درمیان دوطرفہ تجارت کے حجم میں اضافہ ہوگا۔ سیدفخرامام نے معیاری تعلیم کے فروغ کی ضرورت پرزوردیا اوراس ضمن میں ہنگری کی طرف سے 200 پاکستانی طلبا کیلئے وظائف کے اقدام کی تعریف کی۔ہنگری کے ناظم الامورنے ہنگری کے وزیرخارجہ وتجارت کی جانب سے وفاقی وزیرکو”پلانیٹ بڈاپسٹ 2021 پائیداریت ایکسپو اینڈ سمٹ“ میں شرکت کی دعوت بھی دی اورکہاکہ اس ایکسپومیں اقوام متحدہ کے اعلی سطح کے عہدیدار، حکومتی وفود، معروف سائنسدان اورتجارت وکاروبارسے منسلک معروف شخصیات شرکت کریں گی۔انہوں نے کہا کہ اس ایکسپوکابنیادی مقصدپائیدارترقی کیلئے نئی ٹیکنالوجیز متعارف کراناہے اورپاکستان اپنے زرعی شعبہ میں جدت لاسکتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ دونوں ممالک کے درمیان زرعی تجارت کے شعبہ میں وسیع گنجائش ہے۔ ہنگری کے ناظم الامورنے کہاکہ زرعی ٹیکنالوجیز کے تبادلہ سے پاکستان میں زرعی پیداوارمیں اضافہ کیا جاسکتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں