23

انضمام شدہ علاقوں کی تعمیر و ترقی کے لئے کئے گئے وعدے کی تکمیل کے لئے اپنا حصہ ڈالیں،وزیراعظم عمران خان

اسلام آباد:وزیراعظم عمران خان نےصوبوں پر زور دیا ہے کہ   انضمام شدہ علاقوں کی تعمیر و ترقی کے لئے کئے گئے وعدے کی تکمیل کے لئے اپنا حصہ ڈالیں۔ انہوں نے  ان خیالات کااظہار بدھ کو اپنی زیر صدارت انضمام شدہ علاقوں کی تعمیر و ترقی اور خصوصاً اس عمل کے لئے وفاق کی جانب سے فراہم کیے جانے والے فنڈز کے حوالے سے جائزہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔  اجلاس میں وزیرِ خزانہ شوکت ترین، وزیرِ منصوبہ بندی اسد عمر، وزیرِ اعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان، معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل، معاون خصوصی ڈاکٹر وقار مسعود، وزیرِ خزانہ خیبر پختونخوا  تیمور سلیم جھگڑا،  سیکرٹری خزانہ و دیگر سینئر افسران  نے شرکت کی۔  اجلاس میں انضمام شدہ علاقوں میں جاری ترقیاتی سرگرمیوں کا جائزہ لیا گیا۔  اجلاس کو بتایا گیا کہ انضمام شدہ علاقوں کی آبادی ملکی آبادی کا تقریباً 2.4فیصد ہے جس کے اعتبار سے این ایف سی ایوارڈ میں انضمام شدہ علاقوں کا حصہ تقریباً 80ارب روپے بنتا ہے جبکہ وفاق کی جانب سے اس وقت 4فیصد کے اعتبار سے ادائیگیاں کی جا رہی ہیں۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ انضمام سے پہلے84ارب ادا کیے جا رہے تھے جبکہ انضمام کے بعد 146ارب ادائیگیاں کی جا رہی ہیں۔  اجلاس کو بتایا گیا کہ مالی سال 2021-22کے بجٹ میں انضمام شدہ علاقوں کی مد میں صوبہ خیبرپختونخواہ کے لئے تقریبا130ارب روپے کا بجٹ مختص کیا گیا ہے۔  اجلاس کو بتایا گیا کہ انضمام شدہ علاقوں کی تعمیر و ترقی کے لئے وفاق کی جانب سے سابقہ قبائلی علاقوں کی عوام سے کیے گئے وعدوں کو مکمل طور پر پورا کیا جا رہا ہے۔  وزیرِ اعظم عمران خان نے کہا کہ انضمام شدہ علاقوں کی تعمیر و ترقی موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ انہوں نے کہا کہ انضمام شدہ علاقوں کی عوام نے ملک کے لئے بے پناہ قربانیاں دی ہیں جن کی  ہم انتہائی قدر کرتے ہیں۔ وزیرِ اعظم نے صوبوں پر زور دیا کہ انضمام شدہ علاقوں کی تعمیر و ترقی کے لئے کیے گئے وعدے کی تکمیل کے حوالے سے صوبے اپنا حصہ ڈالیں تاکہ تعمیر و ترقی کے عمل کو مزید مستحکم کیا جا سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں