25

پارلیمنٹ کی ڈیجیٹلائزیشن کیلئے آٹومیشن کا عمل جنوری 2023 ء تک مکمل کرنے کی ضرورت ہے،صدر مملکت

اسلام آباد:صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ کی ڈیجیٹلائزیشن کیلئے آٹومیشن کا عمل جنوری 2023 ء تک مکمل کرنے کی ضرورت ہے، پارلیمنٹ کی ڈیجیٹلائزیشن سے دونوں ایوانوں میں قانون سازی کے عمل  میں بہتری آئے گی،ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو پارلیمنٹ کو سائبر صلاحیتوں سے لیس کرنے کے منصوبے سے متعلق اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں چئیرمن سینٹ محمد صادق سنجرانی،سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر،وفاقی وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی اینڈ ٹیلی کمیونیکیشن امین الحق،سیکرٹری انفارمیشن ٹیکنالوجی اینڈ ٹیلی کمیونیکیشن محمد سہیل راجپوت،سیکرٹری سینٹ سیکرٹریٹ محمد قاسم صمد خان،سیکرٹری قومی اسمبلی سیکرٹریٹ طاہر حسین،نیشنل انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے ممبران اور وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کے افسران سمیت اعلیٰ حکام نے شرکت کی،صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ جدید ٹیکنالوجی پارلیمنٹ میں منصوبہ بندی ، نگرانی اور کنٹرول کے عمل کو مزید بہتر بنائے گی ، راکین پارلیمان کو آئی ٹی کے جدید ترین لوازمات سے ڈیٹا اور فائلوں تک آسان رسائی مہیا ہوگی، وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اینڈ ٹیلی کمیونیکیشن کی  جانب سےاجلاس کو منصوبے کی موجودہ صورتحال اور پیش رفت پر بریفنگ دی گئی،بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ ڈیپارٹمنٹل ڈویلپمنٹ ورکنگ پارٹی نے منصوبے کیلئے چار سال کے لئے 1950 ملین روپے کی منظوری دی ہے ۔رواں سال منصوبے کے لئے 120 ملین روپے مختص کیے گئے ہیں، پراجیکٹ اسٹاف کی خدمات حاصل کرنے کا عمل شروع کر دیا گیا جس کے لئے  اخبارات میں اشتہاردے دیا گیا ،وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اینڈ ٹیلی کمیونیکیشن نے منصوبہ 2023تک مکمل کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ صدر مملکت نے منصوبے پر وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کی کارکردگی کو سراہااور اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلایا۔\

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں