32

ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ واپڈا رمضان المبارک میں پانی اور بجلی کی فراہمی کو یقینی بنائیں

گلگت(س۔ر) ڈپٹی کمشنر سکردو کیپٹن (ر) طیب سمیع خان نے ایکسیئن برقیات، ایکسیئن واپڈا، ایکسیئن واسا، اور ایس ڈی اوز کے ہمراہ سدپارہ ڈیم پاور ہاؤسز کا دورہ کیا۔ جہاں ایکسیئن واپڈا اور برقیات نے بجلی کی موجودہ صورت حال، ڈیم میں پانی کی سطح، ڈیم سے پانی کا اخراج، بجلی کی پیداوار و ترسیل اور دیگر امور پر تفصیلی بریفنگ دی۔ ایکسیئن واپڈا نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ سکردو شہر کے لیے چار سے پانچ میگاواٹ بجلی فراہم کی جا رہی تھی اور اب رمضان المبارک میں ساڑھے سات سے ساڑھے آٹھ میگاواٹ بجلی فراہم کی جائے گی۔ ایکسیئن برقیات نے کہا کہ واپڈا پاور ہاؤسز کی پیداوار کے علاوہ دو میگاواٹ دیگر علاقوں سے آئے گی اور ڈھائی میگاواٹ تھرمل جنریٹر سے بجلی پیدا ہو گی۔ اس طرح ہمیں مجموعی طور پر بارہ میگاواٹ بجلی ملے گا۔ اور ہمیں سحر و افطار کے وقت سولہ میگاواٹ بجلی درکار ہے۔ اس طرح چار میگاواٹ بجلی شارٹ فال رہے گا۔ ڈپٹی کمشنر نے تمام ایکسیئن کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ رمضان المبارک میں پانی اور بجلی کی فراہمی کو یقینی بنائیں۔ اور باقاعدہ شیڈول کے مطابق افطاری کے اوقات میں تین گھنٹے اور سحری کے اوقات میں دو گھنٹے بلا تعطل بجلی کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔ اس میں کسی قسم کی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔ عوام الناس کو ماہ صیام میں سہولیات پہنچانا ضلعی انتظامیہ کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔ انہوں نے سختی سے ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ رمضان المبارک کے لئے جاری کردہ شیڈول پر من و عن عمل کیا جائے اور سرکٹ کو آن کرنے اور بند کرنے میں صرف پانچ سے دس منٹ کا دورانیہ ہونا چاہیے۔ اگر اس سے زیادہ صارفین کو بجلی بند رکھنے کی صورت میں سیکرٹری برقیات کے احکامات کی روشنی میں متعلقہ اورسیر، شفٹ انچارج معہ سٹاف سب کو معطل کیا جائے گا۔ انہوں نے ایکسیئن واسا اور واپڈا کو ہدایات دی کہ دونوں محکموں کی باہمی مشاورت سے اور طے شدہ معاہدے کے تحت، عوام الناس کی ضروریات کے مطابق ماہِ رمضان میں پینے کے پانی کی فراہمی کو بھی یقینی بنایا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں