169

فقر و درویشی میں پوری زندگی بسر کی اور اپنی اولاد کو رزق حلال کھلایا اور دین مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ترویج میں بسر کی

ہٹیاں بالا (سپیشل رپورٹر)خطہ کشمیر کے نامور دینی پیشوا الحاج پیر سید حمیداللہ شاہ نقوی البخاری نقشبندی رحمتہ اللہ کا چہلم کے موقع پر عظیم الشان دعائیہ تقریب کا انعقاد, دعائیہ تقریب میں قرآن خوانی,حمد و نعت, درود و سلام,ختمات انبیاء ختمات خواجگان نقشبندیہ,اوراد فتیحہ سمیت ذکر و ازکار تزک و احتشام سے پڑھے گئے. اس موقع پر بزرگ دینی پیشوا الحاج پیر سید حمیداللہ شاہ نقوی البخاری رحمتہ اللہ علیہ کے بڑے صاحبزادے اور آزاد کشمیر کے نامور عالم دین علامہ سید محمد اسحاق نقوی کی دستار بندی کی گئی,چہلم کی تقریب میں آزاد کشمیر بھر سے علماء و مشائخ کے علاوہ دینی,سماجی, سیاسی شخصیات نے شرکت کی,دعائیہ تقریب میں وزیر حکومت دیوان علی خان چغتائی, آستانہ عالیہ قطبیہ لنگر شریف و خطیب مرکزی عیدگاہ میجر ر قاضی محمد شبیر احمد, ڈاکٹر سید مبشر حسین کاظمی, علامہ حمیدالدین برکتی و دیگر علماء کرام نے الحاج پیر سید حمیداللہ شاہ المعروف بڑے پیر صاحب کی مذہبی روحانی خدمات کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ الحاج پیر سید حمیداللہ شاہ رحمتہ اللہ علیہ نے ساری زندگی تبلیغ دین کے لیے وقف کی,پوری عمر قرآن کریم کی تعلیم دی اور قرآن کریم کی تعلیمات کو اپنا اوڑھنا بچھونا بنایا,پیر حمیداللہ شاہ رحمتہ اللہ نے فقر و درویشی میں پوری زندگی بسر کی اور اپنی اولاد کو رزق حلال کھلایا اور دین مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ترویج میں بسر کی اور کشمیر کے چپے چپے میں لاالہ الا اللہ محمد الرسول اللہ کا پیغام صوفیائے کرام کے طریقہ محبت کے ساتھ پھیلایا. مقررین نے کہا کہ پیر سید حمیداللہ شاہ کا طرز تبلیغ انتہائی مشفقانہ تھا. جن کی شکل و صورت و سیرت و کردار میں ایک سچے عاشق رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور اصل کشمیری بزرگان دین کی جھلک تھی.جن کی محفل میں بیٹھ کر اندازہ ہوتا تھا کہ آپ ایسے شخص سے مل رہے ہیں جس میں آج بھی اس کشمیری کلچر کی خوشبو موجود ہے جو امیر کبیر حضرت شاہ ہمدان رحمت اللہ علیہ نے کشمیر میں پھیلائی,پیر حمیداللہ شاہ رحمتہ اللہ نے گھر گھر میں ذکر اللہ کی مجالس منعقد کیں اور ختم شریف پڑھنے کا انداز انتہائی مسحور کن ہوتا تھا کہ حاضرین مجلس ذکر اللہ کی لذت حاصل کرتیتھے.تقریب سے صاحبزادہ محمد جنید نے بھی خطاب کیا اور دعا کی,دعائیہ تقریب کی نظامت پروفیسر سید شبیر حسین نقوی نے کی,سابق وزیر مصطفی بشیر عباسی ,سابق امیدوار اسمبلی سید ذیشان حیدر,کرنل ر عارف عباسی,,ڈپٹی کمشنر ضلع جہلم ویلی سید اشفاق گیلانی,چیئرمین ضلع کونسل جہلم ویلی طیب منظور کیانی,پرنسپل جامعہ سکندریہ صاحبزادہ پیر سید فیاض کاظمی, آستانہ عالیہ ندول سے صاحبزادہ ابرار گیلانی,صاحبزادہ مختار گیلانی,پیر سید محمد الیاس شاہ نقوی,صاحبزادہ حمیدالدین برکتی سجادہ نشین جھاگ شریف سالک آباد,صاحبزادہ منظور بصر, صاحبزادہ مبشر علی, صاحبزادہ عامر ظفر,سید ممتاز علی نقوی,ڈائریکٹر آزاد کشمیر یونیورسٹی وقار گیلانی,ایڈیشنل اکاونٹنٹ جنرل ریٹائرڈ سید افضل کاظمی,خطیب پٹہکہ سید حسنین کاظمی, قاضی سید عقیل احمد کاظمی, ممبر ضلع کونسل سید حسنین کاظمی, سید شجاعت گیلانی ایڈووکیٹ, خورشید مغل,ریٹائرڈ ایڈیشنل سیکرٹری قاضی وحید احمد,ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر نصیر سلہریا,ایکسئن ریٹائرڈ شیخ تنویر احمد, ڈپٹی سیکرٹری سید اقبال احمد,نامور ادیب عبدالبصیر تاجور,سید جابر کاظمی ایڈووکیٹ,شیخ تیمور احمد, سید صغیر حسین بخاری, مرزا محمد آصف مغل,پریس فاونڈیشن کے وائس چیئرمین سید ابرار شاہ,پریس کلب ہٹیاں بالا کے صدر اعجازاحمد میر,عارف کشمیری, مبارک اعوان,فیصل گیلانی,ارشد اعوان,کراچی سے انجینئر سید نسیم شاہ,ریاض ہمدانی, نور محمد شاہ ہمدانی, راجہ ظہیرالدین خان,نذیر الدین خان,ایس ڈی او آفتاب کیانی,ایس ڈی او راجہ مسرور احمد ,شاہد حمید عباسی,سعید ظفر عباسی,اسرار ہمدانی,ظاہر ہمدانی,قاری محمد عارف عباسی,بشارت داود, مرتضی کاظمی,راجہ مسعود احمد,سمیت تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے افراد موجود تھے.جبکہ درود و سلام کے بعد زیب سجادہ آستانہ ممتاز عالم دین علامہ سید محمد اسحاق نقوی نے اختتامی دعا کی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں