45

اسرائیل کے لیے امریکہ کی لامحدود مالی حمایت اور ہتھیاروں کی فراہمی کے سنگین نتائج کے بارے میں انتباہ

نیو یارک ( مانیٹرنگ ڈیسک ) جمعرات کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے ایران کے وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے سخت خـبردار کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کی جانب سے صیہونی حکومت کی بے دریغ مالی، اسحلہ جاتی اور لاجسٹک حمایت کے نتیجے میں غزہ اور غرب اردن پر شدید بمباری ہورہی ہے جس میں بے گناہ بچے اور عورتیں اور عام شہری مارے جارہے ہیں۔ انہوں نے متنبہ کیا کہ یہ صورتحال اسی طرح جاری رہی توحالات قابو سے باہر بھی ہوسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ قابضین کے خلاف فلسطینی عوام اور حریت پسند تحریک حماس کی حالیہ کارروائی بین الاقوامی قوانین کے تحت جائز اور بنیادی حق ہے اور اس کاروائی کو کوئي بھی دوسرا نام دینا غیر قانونی اور ناقابل قبول ہے۔ایران کے وزیر خارجہ نے یہ بات زور دے کر کہی کہ فلسطین کی حریت پسند تنظیم حماس بین الاقوامی قوانین کی رو سے غاصبانہ قبضے کے خلاف جدوجہد کر رہی ہے جو اس کا جائز حق ہے۔ایران کے وزیر خارجہ نے کہا کہ حماس اپنی قید میں موجود عام شہریوں کو رہا کرنے کے لیے آمادہ ہے اور دنیا کو چاہیے کہ وہ اسرائيل کی جیلوں میں بند 6000 فلسطینی قیدیوں کی رہائی کی حمایت کرے ۔واضح رہے کہ ایران کے وزیر خارجہ حسین امیر عبدللھیان فلسطین اور خطے کی صورتحال کے بارے میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کے لیے بدھ کی شام نیویارک پہنچے تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں