33

اقوام متحدہ کی قراردادوں کی مسلسل خلاف ورزی کا مرتکب ہو رہا ہے:الطاف بٹ

اسلام آباد:کل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنما اور جموں کشمیر سالویشن موومنٹ کے چیئرمین الطاف احمد بٹ نے ہندوستان کے خونیں اقدامات کے بارے میں کینیڈا کے وزیر اعظم اور وزیر خارجہ کے انکشافات پہ گئے تحفظات کااظہار کیا۔ الطاف احمد بٹ نے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو اور کینیڈا کے وزیر خارجہ میلانی جولی کی طرف سے اپنی سرحدوں کے اندر اور بین الاقوامی سطح پر ہندوستان کے اقدامات کے بارے میں کئے گئے حالیہ انکشافات پر گہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔ چیئرمین الطاف احمد بٹ نے اس بات پر زور دیا کہ بھارت کشمیر میں اقوام متحدہ کی قراردادوں اور انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزی کا مرتکب ہو رہا ہے: بھارت 1947 میں اپنی آزادی کے بعد سے جموں و کشمیر کے لوگوں کے خلاف منظم جبر اور تشدد کر رہا ہے جو اقوام متحدہ کے قراردادوں کے عین مطابق اپنی آزادی کا مطالبہ کرتے ہیں۔ اقوام متحدہ کی قراردادیں کشمیریوں کا بے دریغ قتل اور ان کے حق خودارادیت سے مسلسل انکار عالمی برادری کے لیے شدید تشویش کا باعث ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جنوبی ایشیا میں بھارت کی تسلط کی کوشش خطے کو غیر مستحکم کر رہی ہے۔دوسرے ممالک کے اندرونی معاملات میں بھارت کی مداخلت، پاکستان اور چین کے ساتھ جاری سرحدی جھڑپیں، ہتھیاروں کی دوڑ میں شرکت اور بین الاقوامی قوانین کی بار بار خلاف ورزیوں نے امن و استحکام کو تہہ و بالا کر دیا ہے۔ جنوبی ایشیا کے بھارت کی جانب سے علاقائی تسلط کے حصول کے پورے خطے پر دور رس نتائج مرتب ہوئے ہیں۔ بھارت کی طرف سے دیگر اقوام کی خودمختاری کی بے توقیری پر گفتگو کرتے ہوئے الطاف احمد بٹ نے کہا کہ کینیڈا کی سرزمین پر ایک کینیڈین شہری سکھ رہنما ہردیپ سنگھ نجار کو بھارتی ایجنٹوں کے ہاتھوں قتل کرنے کا حالیہ واقعہ بھارت کی دیگر اقوام کی خودمختاری کی بے توقیری کی روشن مثال ہے۔ اس طرح کے اقدامات سے نہ صرف بین الاقوامی تعلقات کو خطرہ لاحق ہوتا ہے بلکہ بین الاقوامی قانون کے اصولوں کی خلاف ورزی کرنے والے خفیہ ہتھکنڈوں کو استعمال کرنے کے لیے ہندوستان کی رضامندی کو بھی اجاگر کرتا ہے۔ چیئرمین الطاف بٹ نے بھارت کے غیر قانونی طور پر مقبوضہ جموں و کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ یہ تسلیم کرنا ضروری ہے کہ بھارت کئی دہائیوں سے بھارت کے غیر قانونی طور پر مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کر رہا ہے۔ 1947 سے اب تک پانچ لاکھ سے زائد مسلمان بھارتی قابض افواج کے جابرانہ ہتھکنڈوں کا شکار ہو چکے ہیں۔ یہ مظالم عالمی برادری کے لیے مسلسل تشویش کا باعث بنے ہوئے ہیں۔ الطاف احمد بٹ نے دنیا اور بین الاقوامی اداروں سے اپیل کی کہ وہ اپنی آنکھیں کھولیں اور ہندوستان کے حقیقی چہرے کو پہچانیں، جیسا کہ حال ہی میں وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو اور کینیڈا کے وزیر خارجہ میلانی جولی نے بے نقاب کیا ہے۔ یہ ضروری ہے کہ عالمی برادری صورتحال کا نوٹس لے اور جموں و کشمیر کے لوگوں کے لیے امن، انصاف اور حق خود ارادیت کی بحالی کے لیے کام کرے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں